یونانی افسانہ اپنے خداؤں اور ہیروز کے لیے مشہور ہے۔ ظاہر ہے کہ جہاں اچھائی ہے وہاں برائی بھی غالب ہے۔ ہیرو اتنا ہی اچھا ہے جتنا ولن۔ تو آئیے یونانی افسانوں کے 10 مونسٹرز کے بارے میں بات کرتے ہیں۔

Typhon

Typhon - 10 Monsters of Greek Mythology
یونانی افسانوں کے 10 راکشس – Typhon

ٹائفن کو تمام راکشسوں کا باپ کہا جاتا ہے۔ کہا جاتا ہے کہ اگر وہ کھڑا رہتا تو اس کا سر ستاروں کو چھو سکتا تھا۔ بہت سے ذرائع کے مطابق اس کے پاس 100 ڈریگن کے سر تھے۔ اس کے بڑے بڑے پر تھے جو کرہ ارض کی طرف آنے والی سورج کی روشنی کو بھی ڈھانپ سکتے تھے۔ وہ دیوتاوں کے بادشاہ زیوس سے نفرت کرتا تھا۔ دیو ہیکل مونسٹر نے یہاں تک کہ بادشاہوں کے بادشاہ کے ہاتھوں پکڑے جانے سے پہلے زیوس کو شکست دی۔ یہاں تک کہ طاقتور اولمپئین بھی اس عفریت سے خوفزدہ تھے۔

Cerberus

Cerberus
یونانی افسانوں کے 10 راکشس – Cerberus

Cerberus Hade's کا محافظ کتا تھا۔ وہ تین سروں والا کتا تھا جو انڈرورلڈ کے دروازے پر پہرہ دیتا تھا۔ اس کے تین سر جوانی، جوانی اور بڑھاپے کی نمائندگی کرتے ہیں۔ مخلوق کی سب سے مشہور کہانی ہیراکلس کے ساتھ لڑائی ہے۔ جہاں وہ کتے سے لڑ کر فانی دنیا میں لے آیا۔ لیکن Cerberus اتنا خوفناک تھا کہ بادشاہ نے ہیریکلیس سے التجا کی کہ وہ اس جانور کو جہنم (انڈرورلڈ) میں واپس لے جائے۔

میڈوسا

میڈوسا
یونانی افسانوں کے 10 راکشس – Medusa

میڈوسا کو گورگنز کے نام سے بھی جانا جاتا ہے، یونانی اساطیر کے سب سے مشہور مونسٹروس کرداروں میں سے ایک ہے۔ اسے عام طور پر عام بالوں کی جگہ اس کے سر پر سانپوں کے ساتھ دکھایا جاتا ہے۔ کچھ معاملات میں اسے خوبصورت بھی دکھایا گیا ہے۔ تین گورگنوں (بہنوں) میں سے وہ واحد تھی جو فانی تھی۔ یہی وجہ ہے کہ اسے پرسیوس نے مار ڈالا، جس نے اس کا سر کاٹ دیا۔

The Minotaur

The Minotaur
The Minotaur

وہ ایک یونانی افسانوی عفریت تھا جس کا جسم انسان کا تھا لیکن سر بیل کا تھا۔ اسے انسان کا ایک حصہ اور بیل کا ایک حصہ بتایا گیا ہے۔ بالآخر اس عفریت کی کہانی اس وقت اپنے اختتام کو پہنچی جب مینوٹور کو ایتھنین کے ہیرو 'تھیسس' نے مار ڈالا۔

The Hydra

The Hydra - 10 Monsters of Greek Mythology
The Hydra – یونانی افسانوں کے 10 راکشس

ہائیڈرا پانی کا عفریت تھا۔ عفریت ایک خطرناک زہر اور دوبارہ بڑھنے کی صلاحیت رکھتا تھا۔ کہا جاتا ہے کہ جب مخلوق کا ایک سر کاٹا گیا تو اس کی جگہ دو سر بڑھ گئے۔ لیکن آخر کار یہ خطرناک عفریت بھی مارا گیا۔ ایک بار پھر Heracles نے اپنی بہادری کا مظاہرہ کیا اور اس خطرناک پانی کے عفریت کو مار ڈالا۔ 

The Sphinx

The Sphinx
یونانی افسانوں کے 10 راکشس – The Sphinx

اسفنکس ایک عجیب و غریب مخلوق تھی۔ اس میں ایک عورت کا سر، شیر کا جسم اور عقاب کے پر تھے۔ اس مخلوق کا مقابلہ اوڈیپس نے کیا۔ عفریت نے اوڈیپس سے ایک پہیلی پوچھی جب وہ تھیبس کا سفر کر رہا تھا۔ اسفنکس کے لیے یہ عام بات تھی کہ وہ نوجوان مسافروں سے پہیلیاں پوچھے جو اس کا راستہ عبور کرتے تھے۔  

The Cyclops

The Cyclops - 10 Monsters of Greek Mythology
The Cyclops – یونانی افسانوں کے 10 راکشس

وہ گایا، زمین سے پیدا ہونے والے جنات تھے۔ یہ مخلوق اپنی طاقت کی وجہ سے مشہور تھی۔ ان کی صرف ایک آنکھ تھی جو ان کے ماتھے سے نکلی تھی۔ راکشسوں کو پکڑ لیا گیا اور Titans کی حکمرانی میں قید کر دیا گیا۔ وہ آزادی صرف اس وقت دیکھ سکے جب اولمپین اقتدار میں آئے اور زیوس نے راکشسوں کو رہا کیا۔ اس کے بعد راکشسوں نے اولمپینز کے لیے گرج چمک کی۔

Stymphalian Birds

Stymphalian Birds
Stymphalian Birds

یہ عام پرندے نہیں ہیں، جنہیں ہم سب کھلاتے ہیں۔ وہ اصلی راکشس ہیں جو چٹان کے نیچے رہتے ہیں۔ انہیں اکثر سمندری راکشس کہا جاتا ہے کیونکہ وہ بڑے پیمانے پر پانی نگلتے تھے اور بھنور بنا کر جہازوں کو نقصان پہنچاتے تھے۔ ایک بار پھر ان راکشسوں کو خود ہیرو (Heracles) نے نیچے اتارا۔

The Chimera

The Chimera - 10 Monsters of Greek Mythology
یونانی افسانوں کے 10 راکشس – The Chimera

چمیرا ایک اور عجیب و غریب مخلوق تھی جس کا "جسم اور سر" شیر کا ہوتا ہے۔ اس مخلوق کی پشت سے ایک بکری کا سر بھی نکلا اور اس کی دم کی جگہ سانپ تھا۔ افسانہ کے مطابق چمیرا ایک خاتون تھی۔ اس نے اسفنکس اور نیمین شیر کو جنم دیا۔ چمیرا کو یونانی افسانوں کی سب سے زیادہ خوفناک مخلوق میں سے ایک سمجھا جاتا ہے۔

The Empusa

The Empusa
The Empusa

ایمپوسا کو ایک خوبصورت عورت کے طور پر دکھایا گیا ہے۔ لیکن اس کی شکل سے دھوکے میں نہ آئیں۔ وہ کسی کے لیے بھیانک خواب ہو سکتی ہے کیونکہ وہ تیز دانتوں، بھڑکتے بالوں اور چمگادڑ کے پروں والی مخلوق میں تبدیل ہو سکتی ہے۔ اس کا شکار عام طور پر نوجوان مسافر ہوتے ہیں، جو اکیلے سفر کرتے ہیں۔ پہلے وہ نوجوانوں کو بہکاتی اور جب وہ سوتے تو ان کا خون پیتی۔

یہ بھی پڑھیں: بھگوان شیوا کی چیزوں کے پیچھے وجوہات

920 مناظر

براہ کرم اس پوسٹ کی درجہ بندی کریں۔

0 / 5 مجموعی طور پر درجہ بندی: 0

آپ کے صفحہ کا درجہ: